دہشت گردی ختم کر کے پاکستان کو دوبارہ دنیا کا پرامن ترین ملک بنا دینگے : نوازشریف

Aug 12, 2013| Courtesy by : nawaiwaqt.com.pk

news-1376269963-2873لاہور (آئی این پی) وزیر اعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ (ن) لیگ کی حکومت ورثہ میں ملنے والے دہشت گردی‘ لوڈشیڈنگ‘ امن و امان سمیت دیگر مسائل کو خلوص نیت ‘ اللہ تعالیٰ کے فضل اور عوام کی حمایت سے حل کریگی، لوڈشیڈنگ پر قابو پایا جارہا ہے ‘چین کے تعاون اور ملکی وسائل سے نئے پاور پلانٹس کے منصوبے تشکیل دیئے جارہے ہیں‘ دہشت گردی کا قوم کو ساتھ لے کر خاتمہ کرکے پاکستان کو دوبارہ دنیا کا پرامن ترین ملک بنائینگے‘ دہشت گردوں نے عید سے قبل بربریت کا مظاہرہ کرکے عید کو سوگوار بنا دیا‘ حکومت کا پختہ عزم ہے کہ دہشت گردوں کو مکمل طور پر ختم کیا جائے گا‘ پاکستان خطہ میں امن کا خواہاں ہے‘ بھارت سمیت تمام ممالک سے خوشگوار تعلقات چاہتے ہیں ۔ وہ عید کے پہلے روز جاتی امرا رائیونڈ میں عید الفطر کی نماز کے بعد پاکستان مسلم لیگ (ن) کے ارکان پارلیمنٹ، کارکنوں اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ حالات درست کرنے میں وقت لگے گا اور درپیش مسائل ایک رات میں حل ہونے والے نہیں ہیں جب حالات بدلیں گے تو پوری قوم دیکھے گی۔ وزیر اعظم محمد نواز شریف نے کہا کہ بلوچستان میں گڈانی کے مقام پر بجلی کے 10 پاور پلانٹس لگائے جارہے ہیں جن سے ملک کو 6600 میگا واٹ بجلی حاصل ہو گی اور آئندہ چار سے پانچ برسوں میں بجلی کی موجودہ پیداوار میں 10 ہزار میگا واٹ کا اضافہ ہو جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 60 برسوں میں ملک میں 16 ہزار میگا واٹ بجلی بنائی گئی جبکہ ہم اللہ تعالیٰ کی مدد سے آئندہ 5 برسوں میں 10 ہزار میگا واٹ بجلی پیدا کرکے ملک کو اندھیروں سے نکال کر روشنیوں میں لے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ لوڈشیڈنگ میں پہلے کی نسبت بہت بہتری آئی ہے تاہم اس کو ختم کرنے میں ابھی وقت لگے گا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ بجلی چوری ایک بہت بڑا مسئلہ ہے۔ بجلی چور عام لوگوں تک بجلی نہیں پہنچنے دیتے مگر حکومت بہت جلد اس مسئلہ کو بھی حل کرنے میں کامیاب ہو جائیگی۔ انہوں نے کہا کہ اگر سابقہ حکومت انرجی مسائل کوبہتر منصوبہ بندی سے حل کرتی تو آج انرجی کا بحران نہ ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ اگر اللہ تعالیٰ نے ہمیں 5 سال تک موقع دیا تو ہم بے گھروں کو گھر اور بیروزگاروں کو گھر کی دہلیز پر روزگار کی فراہمی کو یقینی بنائیں گے۔