پاکستان‘ تھائی لینڈ کا سیاسی‘ اقتصادی پارٹنر شپ بڑھانے‘ 2018 تک تجارتی حجم ڈبل کرنے پر اتفاق

Aug 21, 2013| Courtesy by : nawaiwaqt.com.pk

news_detail_img-epaper_id-4712-epaper_page_id-59169-epaper_map_detail_id365851

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی+ نوائے وقت رپورٹ+ اے پی پی) پاکستان اور تھائی لینڈ نے سیاسی و اقتصادی پارٹنرشپ کو مزید تقویت دینے اور 2018ء تک دوطرفہ تجارتی حجم دگنا کر کے 2 ارب ڈالر کرنے پر اتفاق کیا ہے جبکہ دونوں ممالک کے درمیان تجارتی اور اقتصادی روابط بڑھانے کیلئے مشترکہ تجارتی کمیٹی اور مشترکہ بزنس کونسل کے قیام کیلئے معاہدے کئے گئے ہیں۔ یہ اتفاق رائے وزیراعظم نوازشریف اور تھائی وزیراعظم ینگ لک شیناوترا کے درمیان منگل کو وزیراعظم ہائوس میں ہونے والے مذاکرات کے دوران پایا گیا۔ تھائی وزیراعظم پاکستان کے دو روزہ سرکاری دورے پر منگل کو ہی اسلام آباد پہنچی تھیں، ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف نے کہا تھائی ہم منصب اور انکے درمیان وسیع تر امور پر تفصیلی تبادلہ خیال ہوا، اہم دوطرفہ اور بین الاقوامی امور پر خیالات میں ہم آہنگی پائی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا ہم سیاسی، اقتصادی اور دفاعی شعبوں میں حالیہ برسوں میں ہونے والی پیشرفت پر مطمئن ہیں، ہم نے دونوں عوام کے باہمی مفاد میں اس شراکت داری کو مزید مضبوط بنانے اور وسعت دینے پر اتفاق کیا۔ ہم پاکستان اور تھائی لینڈ کے درمیان مضبوط اقتصادی شراکت داری استوار کرنے کے خواہاں ہیں۔ انہوں نے کہا ہم امید رکھتے ہیں ہمارا تجارتی حجم آئندہ پانچ برسوں میں دگنا ہو جائے گا۔ وزیراعظم نے کہا ہم نے تھائی کاروباری افراد کو انفراسٹرکچر کی ترقی، توانائی، آٹو پارٹس کی تیاری، فوڈ پراسیسنگ، جیم اینڈ جیولری، سیاحت سمیت مختلف شعبوں میں پاکستان میں سرمایہ کاری کی دعوت دی ہے۔ انہوں نے کہا دونوں ممالک نے ایم او یو کے تحت مشترکہ تجارتی کمیٹی قائم کرنے پر اتفاق کیا ہے، اسی طرح نجی سطح پر دونوں اطراف کے درمیان کاروباری روابط کے فروغ کیلئے ایک مشترکہ کاروباری کونسل بھی ایم او یو کے تحت قائم کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ ہماری ’’وژن ایسٹ ایشیا‘‘ پالیسی کا اہم جزو ہے جو تھائی لینڈ کی ’’لک ویسٹ‘‘ پالیسی کیلئے معاون ہے، ہم درحقیقت اچھے دوست اور شراکت دار ہیں۔ تھائی وزیراعظم نے کہا  پاکستان اس خطے میں تھائی لینڈ کا ایک پرانا دوست ہے جس کے ساتھ چھ دہائیوں سے قریبی سفارتی تعلقات ہیں۔ انہوں نے پاکستان میں حالیہ بارشوں اور سیلاب سے ہونے والی تباہی پر افسوس کا بھی اظہار کیا۔ انہوں نے پاکستان میں جمہوریت کے تسلسل اور خوش اسلوبی کے ساتھ حکومت کی تبدیلی کو خوش آئند قرار دیا۔ وزیراعظم ینگ لک نے کہا ملاقات کے دوران انتہا پسندی کے چیلنجوں پر بھی تبادلہ خیال ہوا اور انکا ملک انتہا پسندی کے چیلنجوں پر قابو پانے کیلئے پاکستان کے اقدامات کی حمایت کرتا ہے۔ انکا کہنا تھا  تھائی لینڈ انتہا پسندی کے مسئلے پر قابو پانے کیلئے پاکستان اور او آئی سی کا تعاون چاہتا ہے۔ انہوں نے اقتصادی تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے کہا دونوں ممالک جلد آزادانہ تجارتی معاہدے کو حتمی شکل دینگے۔ انہوں نے یقین دلایا تھائی لینڈ آسیان میں پاکستان کے مکمل ڈائیلاگ پارٹنر بننے کی حمایت کرے گا ۔ انہوں نے وزیراعظم نواز شریف کو مناسب وقت پر تھائی لینڈ کا دورہ کرنے کی بھی دعوت دی۔ پاکستان اور تھائی لینڈ نے دونوں ممالک کے سفارتکاروں کو ویزے سے استثنیٰ دینے کے معاہدہ پر بھی دستخط کئے۔ وزیراعظم محمد نوازشریف اور تھائی وزیراعظم سمجھوتوں پر دستخطوں کی تقریب میں موجود تھیں۔ سفارتی پاسپورٹ رکھنے والوں کیلئے ویزے کے استثنیٰ کے معاہدے پر وزیراعظم کے معاون خصوصی طارق فاطمی اور تھائی لینڈ کے نائب وزیر خارجہ نے دستخط کئے۔ مشترکہ تجارتی کمیٹی کے قیام کیلئے ایم او یو پر نجکاری کے وزیر مملکت انجینئر خرم دستگیر اور تھائی لینڈ کے نائب وزیر تجارت جبکہ مشترکہ بزنس کونسل کے قیام کی ایم او یو پر ایف پی سی سی آئی کے صدر زبیر احمد ملک اور تھائی لینڈ کے تجارتی بورڈ کے چیئرمین نے دستخط کئے۔ وقت نیوز کے مطابق تھائی لنیڈ کی وزیراعظم ینگ لک شینوترا نے السلام علیکم سے پریس کانفرنس کا آغاز کیا۔ تھائی وزیراعظم نے کہا پاکستان میں پرتپاک استقبال اور شاندار میزبانی پر شکرگزار ہوں۔ قبل ازیں تھائی وزیراعظم اسلام آباد پہنچیں تو ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا اور 21توپوں کی سلامی دی گئی۔ اے این این کے مطابق تھائی وزیراعظم نے اپنے وفد کے ساتھ نوازشریف سے ملاقات کی۔

nawaiwaqt.com.pk